امریکی سرحدی ادارے کی امیگریشن کے قوانین کے نفاذ کی کاوشیں

پس منظر میں دکھائی دینے والے رہائشی علاقے کے سامنے لوہے کی دیوار جس پر کانٹے دار تار لگی ہوئی ہے۔ (© Charlie Riedel/AP Images)
2019ء میں نوگالیس، ایریزونا کو نوگالیس، میکسیکو سے جدا کرنے والی دیوار پر لگی کانٹے دار تار۔ (© Charlie Riedel/AP Images)

امریکہ کے کسٹمز اور سرحدی تحفظ کے محکمے (سی بی پی) کے قائم مقام کمشنر کی طرف سے امریکہ میں غیرقانونی طور پر داخل ہونے کے بارے میں سوچنے والوں کے لیے ایک بڑا واضح پیغام ہے: "آج ، اس وقت مارچ میں، اگر آپ ہماری سرحد پر آتے ہیں اور غیر قانونی طور پر ہمارے قوانین کی خلاف ورزی کرنے اور میرٹ کے بغیر مبنی دعوی دائر کرنے کی کوشش کرتے ہیں تو آپ کو نکال دیا جائے گا، آپ کو واپس کردیا جائے گا، یا آپ کے خلاف مناسب کاروائی کی جائے گی۔”

سی بی پی کے قائم مقام کمشنر مارک مورگن نے 12 مارچ کو کہا، ” ہم اپنی سرحد کو مضبوط بنانے کے لیے ناقابل یقین پیشرفت جاری رکھے ہوئے ہیں (جس کا مقصد) خاص طور پر نہ صرف ہمیں درپیش بے تحاشا خطرات سے نمٹنا ہے بلکہ خصوصی طور پر غیرقانونی امیگریشن سے بھی نمٹنا ہے۔”

سی بی پی نے گزشتہ پانچ ماہ میں جتنے غیرقانونی تارکین وطن کو گرفتار کیا ہے اُن سے زیادہ تعداد میں غیرقانونی تارکین وطن کو ملک سے نکالا جا رہا ہے۔

کانگریس کی ریسرچ سروس کے مطابق تاریخی طور پر گرفتاریوں کو غیرقانونی امیگریشن سے نمٹنے کے ایک اقدام کے طور پر استعمال کیا جاتا رہا ہے۔

اس کا مطلب یہ ہے کہ آٹھ مہینوں سے غیر قانونی سرحد عبور کرنے والوں کی تعداد میں مجموعی طور پر کمی واقع ہوئی ہے۔ گو کہ فروری 2020 میں تھوڑے سے وقت کے لیے اِن میں اضافہ ہوا تاہم سی بی پی نے واضح کیا کہ فروری کے مہینے کے دوران تاریخی طور پر سرحد عبور کرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہو جاتا ہے۔

سرحد عبور کرنے والوں کی تعداد اعداد اور الفاظ میں۔ (State Dept.)
(State Dept.)

مثال کے طور پر 2019 میں گرفتاریوں کی تعداد میں جنوری سے فروری تک 30 فیصد اضافہ ہوا جو مورگن کے کہنے کے مطابق یہ بات ثابت کرتی ہے کہ امریکی حکومت کی امیگریشن پالیسیاں اس سال موثر انداز سے نافذ العمل ہیں۔

سی بی پی غیرقانونی طور پر سرحد عبور کرنے والوں کی سلامتی کا عزم کیے ہوئے ہے۔ مورگن نے یہ بات زور دے کر کہی کہ انسانوں کا بیوپار کرنے والے اور سمگلر امریکی سرحد کی طرف سفر کرنے والی عورتوں، بچوں اور کنبوں کا استحصال کرنا جاری رکھیں گے۔

انہوں نے کہا، "انسانی سمگلروں پر بھروسہ نہ کریں۔ امریکہ کے خظرناک سفر پر روانہ ہوکر اپنے آپ کو اور اپنے بچوں کو خطرے میں نہ ڈالیں۔”