بھارت کے پانی کا باکفایت استعمال: ایوارڈ ‘پیپسی کو’ کے نام

مشروبات کی کمپنی ‘پیپسی کو’ کے بھارت میں کاروبار کرنے کا مطلب پانی استعمال کرنا ہی نہیں بلکہ اس کی کمی کو پورا کرنے کے طریقے بھی نکالنا ہے۔

دنیا کے وسائل کے بارے میں عالمی انسٹی ٹیوٹ کے مطابق پانی کی سب سے زیادہ قلت کا سامنا کرنے والے ممالک میں بھارت کا شمار تیرھویں نمبر پر ہوتا ہے۔ اس کے جواب میں میں پیپسی کو انڈیا نامی کمپنی پانی کی کفایت شعاری میں قائدانہ کردار ادا کر رہی ہے۔ پانی کے پائیدار وسائل کی ترقی اور انتظام کاری کے اپنے ایک پروگرام کے تحت یہ کمپنی پانی ذخیرہ کرنے والے ٹینکوں کی مرمت اور زمین میں کھودے جانے والے کنووں میں پانی کے سوتوں میں دوبارہ پانی پہنچا کر اب تک پانچ ارب لٹر پانی کا ذخیرہ کر چکی ہے۔ اِن کاموں سے کمیونٹی کے 60,000 افراد کو فائدہ ہوا ہے۔

کھیت میں بیٹھی کام کرتی ہوئی ایک عورت کی تصویر؛ محکمہ خارجہ کے شاندار تجارتی ادارے کے ایوارڈ پر رقم تحریر۔ (© Ashima Narain/Pepsico)

پائیداری کے ساتھ ‘پیپسی کو’ کے عزم کے اعتراف کے طور پر، اس کثیر الملکی کمپنی کو پائیدار سرگرمیوں کے زمرے میں سال 2019 کا وزیر خارجہ کا شاندار تجارتی ادارے کا ایوارڈ (اے سی ای) دیا گیا ہے۔ چھوٹی اور درمیانے درجے کی کمپنیوں کے زمرے میں یہ ایوارڈ ایگیلیس پارٹنزز نے جیتا۔ 1999ء میں اے سی ای کا قیام عمل میں آیا۔ اس کے تحت اُن امریکی کمپنیوں کی خدمات کا اعتراف کیا جاتا ہے جو اُن علاقوں میں معیارات برقرار رکھتی ہیں جہاں وہ کاروبار کرتی ہیں اور اس امر کا عملی مظاہرہ کرتی ہیں کہ پائیداری، خوشحالی اور جدید معیشت دونوں کو بڑہاوا دے سکتی ہے۔

جیسا کہ وزیر خارجہ مائیکل آر پومپیو کہہ چکے ہیں، “ہمارے تعاون کی عظیم روح یہ ہے: امریکہ جہاں جاتا ہے، ہم وہاں شراکت کاری کے متلاشی ہوتے ہیں، نہ کہ غلبے کے۔”

2017ء میں ‘پیپسی کو انڈیا’ نے17 ارب لٹر سے زائد پانی کی بچت کرنے کے لیے مقامی کمیونٹیوں کے ساتھ مل کر کام کیا۔ اس مقصد کے لیے ایسی کاشت کاری کو فروغ دیا گیا جس سے پانی کے ذخیرے اور کفایت شعاری میں اضافہ ہوتا ہے۔ ‘پیپسی کو’ نئی ٹکنالوجیوں اور کاشت کاری کے پائیدار طریقوں کو استعمال میں لاتے ہوئے نو ریاستوں پر پھیلے ہوئے 24,000 کسانوں کے ساتھ آلو، مکئی اور دیگر اجناس حاصل کرنے کے لیے شراکت کاری کرتی ہے۔

ٹوئٹر کی عبارت کا خلاصہ:

پیپسی کو انڈیا:

ہم اپنے لیے امریکہ کے محکمہ خارجہ کی جانب سے پانی کے ذخیرے اور بچت کی خاطر پیپسی کو انڈیا کی کوششوں کا اعتراف کیے جانے کو ایک اعزاز کی بات سمجھتے ہیں۔ یہ ہماری پائیداریت کی ٹیموں اور ماحولیاتی ساجھے داروں کے عزم کا حقیقی ثبوت ہے۔

 محکمہ خارجہ کے اقتصادی سفارت کاری:

وزیر خارجہ کے شاندار تجارتی ادارے کا ایوارڈ جیتنے  والوں یعنی ایگیلیس پارٹنرز، چیمبرز فیڈریشن، پیپسی کو انڈیا، اور پروکٹر گیمبل ایشیا پیسیفک کو مبارک ہو۔ ایوارڈ کی تقریب 31 اکتوبر کو سہ پہر 3 بجے (ای ڈی ٹی) دیکھیے۔

ایشیا، مشرق وسطی اور جنوبی افریقہ کے لیے پیپسی کو کی سینیئر نائب صدر، کرسٹا پائلٹ نے کہا، ” ‘پیپسی کو’ میں ہمارا راہنما اصول ایک مقصد کے تحت جیتنا ہے۔ ہمارا بنیادی یقین یہ ہے کہ ہماری کمپنی کی کامیابی ہمارے ارد گرد کی دنیا کی پائیداری سے مکمل طور پر جڑی ہوا ہے۔