ریاستی حکومتیں: جمہوریت کی تجربہ گاہیں

یہ تحریر امریکہ میں وفاقیت کے طریق کار کے بارے میں مضامین کے سلسلے کا حصہ ہے۔ دیگر حصوں میں مقامی حکومتوں اور وفاقی حکومت کے بارے میں بتایا گیا ہے۔

امریکہ کی 50 ریاستیں ‘جمہوریت کی تجربہ گاہیں’ کہلاتی ہیں کیونکہ یہاں پالیسی کے حوالے سے تخلیقی تصورات کا ریاست کے اندر عملی تجربہ کیا جاتا ہے اور بعض اوقات انہیں وفاقی سطح پر بھی اختیار کر لیا جاتا ہے۔

کم از کم اجرتوں کے حوالے سے قومی قوانین، کام کی جگہوں پر حفاظتی معیارات، بہبود اور صحت کی سہولتوں سے متعلق پالیسیوں کی ابتدا ریاستوں سے ہی ہوئی تھی۔

امریکہ ایک ایسے نظام پر انحصار کرتا ہے جسے ” وفاقیت” کہا جاتا ہے۔ اس نظام میں حکومتی اختیارات مقامی، ریاستی اور قومی ذمہ داریوں کی بنیاد پر تقسیم کیے جاتے ہیں۔ اس تصور کو سمجھنا اہم ہے کیونکہ شہریوں کو روزانہ مختلف انداز میں مختلف سطح کی حکومتوں سے واسطہ پڑتا ہے۔

‘امریکن لجسلیٹو ایکسچینج کونسل’ میں عالمی تعلقات اور وفاقیت کے شعبے کی ڈائریکٹر، کارلا جونز اس کی وضاحت میں کہتی ہیں کہ امریکی وفاقیت کی ساخت اور سیاسی کلچر ازخود اقدامات اٹھانے کے لیے ریاستوں کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے، “ہم بہت سے ترقی یافتہ ممالک کے مقابلے میں اس اعتبار سے منفرد ہیں کہ ہم نے ریاستوں کو بہت سے اختیارات دے رکھے ہیں۔”

ریاستیں کیا کرتی ہیں؟

ریاستیں اپنی حدود میں رہنے والے لوگوں کو پیدائش سے موت تک بہت سی خدمات مہیا کرتی ہیں۔ ایسا اس لیے ہے کہ ریاستیں ہی پیدائش اور موت کے سرٹیفکیٹ جاری کرتی ہیں۔

ریاستیں ہسپتالوں کے انتظام اور صحت عامہ، سڑکوں کی تعمیر و مرمت، سکولوں کالجوں کی مالیات، ٹیکس جمع کرنے اور ریاستی پولیس چلانے کی ذمہ دار ہوتی ہیں جسں کے اراکین کو عموماً “سٹیٹ ٹروپر” کہا جاتا ہے۔

ہر ریاست میں موٹرگاڑیوں کا ایک محکمہ ہوتا ہے جہاں شہری اپنی گاڑیاں رجسٹر کراتے، ڈرائیونگ لائسنس حاصل کرتے اور ٹریفک خلاف ورزیوں پر ہونے والی سزاؤں کو چیلنج کرتے ہیں۔ یہ تمام خدمات محصولات اور مختلف کاموں کے بدلے فیسوں کی وصولی کے عوض انجام دی جاتی ہیں۔

تمام ریاستوں میں رجسٹرڈ رائے دہندگان کے ذریعے منتخب ہونے والے ریاست کے گورنر کی ذمہ داریاں مختلف طرح کی ہوتی ہیں۔ تاہم عمومی طور پر گورنر مسودہ ہائے قوانین کو قانونی شکل دیتا اور ریاست کی انتظامی شاخ کو چلاتا ہے جو گورنر کا ایجنڈا نافذ کرتی ہے۔ گورنر عام طور  پر سرکاری رہائش گاہ میں رہتے ہیں جس کے اخراجات ٹیکس دہندگان کی رقم سے پورے کیےجاتے ہیں۔ اسے گورنر مینشن کہا جاتا ہے اور یہ ریاست کے دارالحکومت میں واقع ہوتا ہے۔

ذیل کے گراف میں ہر حکومتی شعبے میں اداروں کی اقسام کا خلاصہ دیا گیا ہے:

مقامی، ریاستی، اور وفاقی سطحوں پر اختیارات کی تقسیم دکھانے والا چارٹ۔ (State Dept./J. Maruszewski)
(State Dept./J. Maruszewski)

گورنر کے علاوہ ہر ریاست میں ایک مقننہ بھی ہوتی ہے۔ اس کے حجم کا دارومدار ریاست پر ہوتا ہے۔ مثال کے طور پر آبادی کے اعتبار سے چھوٹی ریاست نیو ہمپشائر کی ریاستی اسمبلی میں ارکان کی تعداد 400 ہے جبکہ ملک کی سب سے بڑی آباری والی ریاست کیلی فورنیا کی مقننہ میں 80 ارکان ہوتے ہیں۔

ریاست کے شہری اپنے نمائندوں اور ریاستی سینیٹروں کا انتخاب کرتے ہیں جو ریاستی دارالحکومت میں کام کرتے ہوئے قوانین تجویز کرتے، لکھتے اور ان پر رائے دیتے ہیں اور سالانہ بجٹ منظور کرتے ہیں۔ ریاست مقامی حکومتوں، سکولوں، لائبریریوں اور ایسے دوسرے اداروں کے لیے مالیات میں بھی حصہ ڈالتی ہے۔

یہ مضمون فری لانس مصنف لینور ٹی ایڈکنز نے تحریر کیا۔