Deputy Secretary of State John J. Sullivan talking with Navy Adm. Craig Faller (left) (Jose Ruiz/U.S. Southern Command Public Affairs)
امریکہ کی جنوبی کمانڈ کے کمانڈر، بحریہ کے ایڈمرل کریگ فالر، نائب وزیر خارجہ جان جے سلیوان کا استقبال کر رہے ہیں۔ (Jose Ruiz/U.S. Southern Command Public Affairs)

نائب وزیر خارجہ جان جے سلیون نے کہا ہے کہ امریکہ اور اس کے کیریبین ہمسائے نہ صرف جغرافیے بلکہ “ایک مشترکہ تاریخ، مشترکہ مفادات اور گہرے سماجی روابط” کے ذریعے بھی ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں۔

12 اپریل کو میامی میں ہونے والے امریکہ اور کیریبین کی لچکدار شراکت کاری کے وزارتی اجلاس میں، کیریبین کے 18 ممالک، قدرتی آفات میں امدادی کام کرنے والی تنظیموں، اور امریکی حکومت کے مختلف اداروں کے نمائندوں کو سلیوان نے خوش آمدید کہا۔

میامی کا اجلاس اس لیے بلایا گیا تھا تاکہ علاقائی ماہرین سال 2019 میں بحر اوقیانوس میں اٹھنے والے متوقع طوفانوں کی تیاری کی خاطر امدادی کام کرنے کے بارے میں اپنے اپنے نقطہائے نظر بیان کر سکیں۔ طوفانوں کا یہ موسم جون سے نومبر تک جاری رہتا ہے۔ سلیوان نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ کا عزم قدرتی آفات سے بڑھکر آگے تک جاتا ہے۔ اکٹھے مل کر امریکہ اور اس کے کیریبین اتحادی ” لچک پیدا کریں گے، اور اس کے نتیجے میں ہماری زندگیاں اور روزگاروں کے ذرائع بچائیں گے۔”

سلیوان نے کہا کہ قدرتی آفات کے جواب میں پائیدار تعاون اور لچک کا انحصار علاقائی خوشحالی، سلامتی، حفظان صحت، تعلیم اور توانائی کے بنیادی ڈھانچے کو مضبوط بنانے پر منحصر ہے۔ اِن تمام معاملات میں امریکہ کیریبین ممالک کے ساتھ  وسیع، اور طویل المددت تعاون کے لیے پرعزم ہے۔

امریکی ساحلی علاقوں میں 2017ء میں آنے والے ہاروی، ارما اور ماریا نامی  طوفانوں کا حوالہ دیتے ہوئے سلیوان نے کہا کہ طوفانوں کے نزدیک سرحدوں کی کوئی اہمیت نہیں۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کو اپنےہاں آنے والی قدرتی آفات کا مقابلہ کرنے اور بحالی کا کام بہرصورت خود ہی کرنا چاہیے مگر اس کے ساتھ ساتھ اسے مستقبل کے طوفانوں کے لیے موثر طور پر تیار رہنے میں اپنے ہمسایوں کی بھی مدد کرنا چاہیے۔

سلیوان نے کہا کہ ‘ٹریڈ وِنڈز’ نامی سالانہ مشقوں کے دوران بننے والے سول اور فوجی تعلقات علاقائی تیاری کو مضبوط بنائیں گے۔

کیریبین علاقوں پر مرکوز اِن تربیتی مشقوں کا مقصد قدرتی آفات اور زمینی اور سمندری خطرات سے نمٹنے کی تیاری کو بہتر بنانا ہوتا ہے۔ ٹریڈ وِنڈز میں امریکہ کی افواج اور سکیورٹی ادارے 20 سے زائد دیگر ممالک کے اپنے ہم منصبوں کے ساتھ مل کر کام کرتے ہیں۔

سلیوان نے کہا اگر کوئی قدرتی آفت آئے گی تو امریکہ شہری ہوابازی اور امدادی کاروائیوں میں اپنے ہمسائے کے ساتھ قریبی تعاون کرے گا۔ انہوں نے موسمی پیش گوئی، طوفانی پانی کے ریلوں کے نقشوں کی تیاری، توانائی کی لچکدار منصوبہ بندی، اور بنیادی سطحوں پر مرکوز پروگراموں میں قریبی شراکت کاری پیدا کرنے کا وعدہ بھی کیا۔

سلیوان نے کہا کہ آج کی ذمہ داری موجودہ کاموں کو مضبوط بنانا اور تعاون کی نئی راہوں کی تلاش ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ اور کیریبین کی شراکت کاری ایک پائیدار عمل ہے۔