یو ایس ایڈ کے دنیا بھر میں ماؤں کی مدد کے طریقے

دنیا بھر کی عورتوں کے لیے حمل، بچے کی پیدائش اور بعد از ولادت صحت یابی کے عمل، زندگی کے لیے خطرہ ثابت ہو سکتے ہیں۔

ماؤں کو لاحق اِن خطرات کو کم کرنے کے لیے امریکہ کا بین الاقوامی ترقیاتی ادارہ (یو ایس ایڈ) زچہ و بچہ کی صحت کے تحفظ کے لیے اپنے “مومنٹم” نامی ایک نئے پروگرام کے ذریعے چنیدہ ممالک کے صحت کے حوالے سے زیادہ پرخطرعلاقوں کے لیے فنڈنگ میں اضافہ کرے گا۔

یو ایس ایڈ کے عالمی صحت کے بیورو کی منتظمہ آئرین کوئیک نے بتایا، “صرف گزشتہ 10 برسوں میں یو ایس ایڈ نے کم و بیش 93 لاکھ بچوں اور 340,000 عورتوں کی جانیں بچانے میں مدد کی ہے۔”

اُن کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں عورتوں اور بچوں کی صحت میں عمومی بہتری کے باوجود اب بھی “ماؤں، نوزائیدہ بچوں اور چھوٹے بچوں کی صحت کو بہتر بنانے کا کام ادھورا ہے۔”

بستر پر بیٹھی ایک عورت اور اُس کے قریب ہی بیٹھے آدمی، دونوں نے ایک نوزائید بچے کو ہاتھوں میں اٹھا رکھا ہے۔ (USAID)
2015ء میں جمنا وہار، بھارت کے ہسپتال کے زچہ و بچہ وارڈ میں ایک نیا کنبہ۔ (USAID)

انگریزی الفاظ کا مخفف ‘مومنٹم’، مربوط، معیاری، اور بچے کی صحت اور خاندانی منصوبہ بندی اور تولیدی صحت کی سہولتوں کو معیاری بنانے کے پراجیکٹوں کے مجموعے کا ایک ایسا پروگرام ہے جس کا مقصد چھوٹی بڑی دونوں قسم کی آبادیوں میں رہنے والی عورتوں اور بچوں کو صحت کی معیاری سہولتیں فراہم کرنا ہے۔ اِن پراجکیٹوں کا مقصد ماؤں اور بچوں کی اموات کو کم کرنا اور حقائق کی بنیاد پر صحت کے ہر ایک طبقے کی ضروریات پوری کرنے والے نظام تیار کرنے میں دنیا کے ممالک کی مدد کرنا ہے۔

مثال کے طور پر جنوبی سوڈان میں ماؤں کی اموات کی شرح دنیا میں سب سے زیادہ ہے۔ افریقہ کے زیریں صحارا کے خطے میں ماؤں کی اکثریتی اموات، زیادہ خون کے بہہ جانے، حمل کے دوران ہائی بلڈ پریشر، انفیکشن جیسی بیماریوں اور ولادت سے پیدا ہونے والی پیچیدگیوں سے ہوتی ہیں۔ اِن سب بیماریوں کی روک تھام کی جا سکتی ہے۔

مومنٹم سے جنوبی سوڈان اور دیگر ممالک میں رضاکارانہ خاندانی منصوبہ بندی کے ساتھ ساتھ ماؤں، نوزائیدہ بچوں اور چھوٹے بچوں کے لیے صحت کی سہولتوں تک رسائی کو بڑہانے میں مدد ملے گی۔ اس میں ہسپتالوں اور صحت کی سہولتیں فراہم کرنے والے دیگر مقامات میں ولادت کے فروغ اور ماؤں کے لیے بچے کی پیدائش سے قبل، پیدائش کے دوران اور اس کے بعد صحت کی ماہرانہ خدمات کو یقینی بنانا بھی شامل ہے تاکہ معالجین شروع میں ہی بیماریوں کی نشاندہی اور اُن کا بروقت علاج کر سکیں۔

کوئیک کہتی ہیں، “مومنٹم کے ذریعے یو ایس ایڈ ایسے ممالک کی ضرورتیں پوری کرے گا جو ترقی کی راہ پر گامزن ہیں اور انہیں صحت کے شعبے میں خود انحصاری کی جانب پیشرفت کے لیے ضروری مدد فراہم کرے گا۔”

130 ملین ڈالر کے پراجیکٹوں کے پہلے دو مجموعوں کی فنڈنگ کا اعلان کیا جا چکا ہے اور اُن پر کام ہو رہا ہے۔ تیسرے کا اعلان 2020ء کے اواخر میں متوقع ہے۔

مومنٹم فنڈنگ میں پراجیکٹوں کی تکمیل کے بعد نگرانی اور جائزے کا بھی خیال رکھا گیا ہے تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ وہ ہر ایک کمیونٹی کی مدد کر رہے ہیں۔