17 مارچ کو ہر کوئی آئرش ہوتا ہے

آئرلینڈ کے بزرگ پیشوا سینٹ پیٹرک کے نام سے منایا جانا والا دن، اب صرف آئرش ہی نہیں بلکہ ہر رنگ و نسل کے لوگوں کے لیے خوشیاں منانے کا دن بن گیا ہے۔ دنیا بھر میں منائی جانے والی بعض روایات میں شمار ہونے والی ان سب سے زیادہ ہر ہردلعزیز روایات کا آغاز، امریکہ  سے ہوا تھا۔

ہر سال نیویارک میں ہونے والی پریڈ، دنیا بھر میں سب سے بڑی اور سب سے لمبی پریڈ ہوتی ہے۔ اس میں شرکا کی تعداد 200,000 اور تماشائیوں کی تعداد لگ بھگ 30 لاکھ ہوتی ہے۔ اس پریڈ کا آغاز17 مارچ، 1762ء میں اس وقت ہوا جب  نیویارک میں آئرلینڈ کے لوگوں کے ایک چھوٹے سے گروپ نے جان مارشل کی سرائے تک پریڈ کی تھی۔ امریکہ میں سینٹ پیٹرک کا دن سب سے پہلے 1737ء میں بوسٹن میں منایا گیا تھا۔

People in parade (© AP Images)
سینٹ پیٹرک ڈے کی 1948ء کی پریڈ میں، نیویارک کے ففتھ ایونیو پر فوجی پریڈ کر رہے ہیں۔ (© AP Images)

سینٹ پیٹرک کے دن کی دیگر مشہور “روایات” درحقیقت آئرلینڈ میں رہنے والے بہت سے لوگوں کے لیے نئی چیزیں ہیں۔ آئرلینڈ میں ایک نسل پہلے تک یہ دن مکمل طور پر ایک مذہبی ضیافت کے  طور پر منایا جاتا تھا۔  لوگوں کو اس دن ہرے رنگ کے کپڑے پہننے اور نہروں اور تالابوں میں ہرا رنگ گھولنے یا  گائے کا نمکین  گوشت اور بند گوبھی کھانے  کا خیال  کیسے آیا؟ اس کے جواب کے لیے ہمیں ایک بار پھر امریکہ پرہی نظر ڈالنا ہوگی۔

جیسا کہ تاریخ دانوں اور امریکہ کے مردم شماری کے بیورو کے فراہم کردہ ذیل میں دیئے گئے حقائق سے عیاں ہے، آئرش نژاد امریکی اپنی اُس شاندار تاریخ کے امین ہیں جو نوآبادیاتی دور سے شروع ہوتی ہے۔

  • امریکہ کے بائیس صدور کے آباواجداد کا تعلق آئرلینڈ سے تھا۔ اینڈریو جیکسن وہ واحد صدر ہیں جن کی والدہ اور والد، دونوں آئرلینڈ میں پیدا ہوئے۔
  • 1776ء کے اعلان آزادی پر دستخط کرنے والوں میں سے نو، یا تو خود آئرش تارکین وطن تھے یا اُن کی اولاد تھے۔ جارج واشنگٹن کی جنگ آزادی کے 20 سے زیادہ جنرلوں کا تعلق آئرلینڈ سے تھا اور امریکی بحریہ میں کمیشن حاصل کرنے والا پہلا آدمی بھی آئرلینڈ سے ہی تھا۔
  • 1861 سے 1865 تک ہونے والی امریکی خانہ جنگی میں لڑنے والے امریکیوں میں سے 190,000 سے زیادہ آئر لینڈ میں پیدا ہوئے۔
  • امریکہ کا اعلیٰ ترین فوجی اعزاز کانگریشنل میڈل آف آنر، آئرلینڈ میں پیدا ہونے والے 253 مردوں کو دیا جا چکا ہے۔ ماسوائے امریکہ کے، کسی بھی دوسرے ملک کے مقابلے میں یہ تعداد سب سے زیادہ ہے۔
  • 3کروڑ 40 لاکھ سے زیادہ امریکیوں کا دعویٰ ہے کہ ان کے آبا واجداد آئر لینڈ سے آئے تھے۔ یہ تعداد خود آئر لینڈ کی اپنی آبادی سے سات گنا زیادہ ہے۔
Woman in St. Patrick’s Day costume (© AP Images)
سوانا، جارجیا میں، ایک پریڈ دیکھنے والی خاتون۔ (© AP Images)

امریکہ میں ایسے 16 مقامات ہیں جن کا نام  آئر لینڈ کے دارالحکومت کے نام پر ، ڈبلن رکھا گیا ہے۔

امریکہ میں سینٹ پیٹرک کا دن ہر شخص کے لیے — خواہ وہ آئرش ہو یا نہ ہو —  خوشیاں منانے کا دن اور “آئرش پن” کی اپنے حساب سے تعریف متعین کرنے کا دن ہے۔ ایک کہاوت کے مطابق، سینٹ پیٹرک کے دن  سب ہی آئرش ہوتے ہیں۔