کاروباری نظامت کاری

صابن کی ایک ٹکیہ کے ساتھ غربت کا مقابلہ

سوپ باکس ایک ایسا کاروبار ہے جس میں تجارت اور انسانی بھلائی کے کاموں کو یکجا کیا گیا ہے۔ صابن کی بکنے والی ہر ٹیکہ کے بدلے میں یہ کمپنی افریقہ اور دیگر جگہوں پر ایک ٹکیہ مفت دیتی ہے۔

کاروباری نظامت کاری کی کانفرنس سے مندوبین کی عظیم منصوبوں کے...

عالمی کاروباری نظامت کاروباری کی کانفرنس اختتام پذیر ہو چکی مگر اس کے اثرات ختم نہیں ہوئے۔ اس کے نتیجے میں ٹکنالوجی میں نئے کاروبار شروع ہوں گے اور عورتوں کی حوصلہ افزائی ہوگی۔.

ایک خاتون اپنے شمسی سوٹ کیس کے ذریعے صحت عامہ میں...

لارا سٹیچل اور ان کے شوہر کو بعض دیہی طبی مراکز میں قابل اعتبار بجلی کی کمی دیکھ کر حیرانگی ہوئی اور انہوں نے شمسی بجلی کا دستی نظام تیار کیا۔

خواتین کاروباری نظامت کار بھارت میں کانفرنس نمایاں

کاروباری نظامت کاری کی عالمی کانفرنس کا آغاز حیدرآباد میں ہوا جس میں بھارتی وزیراعظم اور ایوانکا ٹرمپ دونوں نے عورتوں کی با اختیاری کی اہمیت پر زور دیا۔

ماں نے بچوں کو عربی سکھانے کے لیے اپنی کمپنی کھول...

راما کیالی نے اپنے بیٹوں کے لیے عربی مواد کی عدم دستیابی کی وجہ سے عالمی کاروباری نظامت کاری کی چوٹی کانفرنس کی روح کو مد نظر رکھتے ہوئے، 'لٹل تھنکنگ مائنڈز' نامی ادارہ تشکیل دیا۔
سشما سواراج اور ریکس ٹِلرسن مصافحہ کرتے ہوئے۔ (State Dept.)

امریکہ اور بھارت: انتہائی اہم شراکتدار

وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن نے کہا ہے کہ امریکہ اور بھارت کے درمیان مضبوط اور بڑھتے ہوئے روابط، امن، خوشحالی، اور استحکام کی کنجی ہیں۔

بھارت کا اہم ترین کام : نئے کاروباری نظامت کاروں کو...

نئی بھارتی کمپنیاں بنگلورو شہر میں پھل پھول رہی ہیں۔ تاہم ملک کو بہت سے مزید کاروباری نظامت کاروں کی ضرورت ہے جس میں عالمی نظامت کاری کی چوٹی کانفرنس مدد کر سکتی ہے۔

جاپان سے بھارت تک عورتوں کی با اختیاری کی آواز: ایوانکا...

صدر ٹرمپ کی صاحبزادی اور وائٹ ہاؤس کی مشیر ایوانکا ٹرمپ کا کہنا ہے کہ کام کرنے کی جگہ کے ماحول میں تبدیلیاں عورتوں کی با اختیاری اور اقتصادی ترقی کے لیے ناگزیر ہیں۔
ایک عورت کمپیوٹر کی سکرین پر گرافوں اور پرزوں کی شکلوں کو چھو رہی ہے۔ (© Shutterstock)

کاروباری نظامت کاری کی کانفرنس کا عنقریب بھارت میں افتتاح

بھارت کے شہر حیدرآباد میں ہونے والی نظامت کاری کی عالمی کانفرنس، کاروباری نظامت کاروں کو سرمایہ کاروں سے ملائے گی اور عورتوں کے ملازمتیں پیدا کرنے کے کردار کو اجاگر کرے گی۔